غزل : نغمہ ناز مکتومیؔ " چلے بهى آؤ تم " CHALE BHI AAO TUM - NAGHMA NAAZ MAKTOOMI

Rate this item
(0 votes)
غزل : نغمہ ناز مکتومیؔ  " چلے بهى آؤ تم "  CHALE BHI AAO TUM - NAGHMA NAAZ MAKTOOMI

غزل : GHAZAL

نغمہ ناز مکتومیؔ - NAGHMA NAAZ MAKTOOMI

 

 " اپنے شریکِ حیات کے نام "

 

‎بہت اُداس ہے موسم چلے بهى آؤ تم

‎ہماری آنکھیں ہوئیں نم چلے بهى آؤ تم

فضائيں بدلی ہیں منظر بھی روکھا روکھا ہے

‎بہت خراب ہے موسم چلے بهى آؤ تم

 

‎نہ جانے كون سا دن كون سى گھڑى ہو گی

‎کھڑی ہوں دور ہو ہر غم چلے بهى آؤ تم

 

‎پرندے لوٹتے ہیں روز آشیانوں میں

‎انہیں سے سیکھ لیں کچھ ہم چلے بھی آؤ تم

 

‎گزر گئیں کئی صدیاں کہ تم بسے پرديس ‎

پکارے دیس کا موسم، چلے بھی آؤ تم

 

‎یہاں بھی جیتے ہیں انسان مال وزر کے بغیر ‎

نہ لوں ریال نہ دِرہم چلے بھی آ ؤ تم

 

‎تمہاری نغمہؔ راہ حيات ميں ہوں نہ

‎نہ ماہتاب ہو مدھم چلے بھی آؤ تم

 

 

نغمہ ناز مکتومیؔ

Last modified on

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

نیا مضمون

Calendar

« March 2019 »
Mon Tue Wed Thu Fri Sat Sun
        1 2 3
4 5 6 7 8 9 10
11 12 13 14 15 16 17
18 19 20 21 22 23 24
25 26 27 28 29 30 31

ممبر لاگ ان

Go to top