الجمعة, 07 آب/أغسطس 2015 15:58

غزل : صدام غنی

Rate this item
(0 votes)

 غزل
 صدام غنی


شجر کی نرم و نازک پتیّاں دل کو لبھاتی ہیں
ہوائیں اپنی دھن میں راگنی اب بھی سناتی ہیں
وہی خاموش منظر ہے وہی مہکی فضائیں ہیں
بس ایسے میں تری یادیں مجھے پاگل بناتی ہیں
کبھی وعدے محبت کے کبھی قسمیں وفاؤں کی
خیالوں میں وہ باتیں آج بھی دل کو دکھاتی ہیں
لب نازک پہ باتیں پیار کی آنکھوں میں اک جادو
شب غم میں تری الفت کی باتیں یاد آتی ہیں
کبھی چھیڑا کوئی نغمہ وفا کے ساز پہ ہم نے
تو ایسے میں مجھے تری صدائیں یاد آتی ہیں
یہ حسرت رہ گئی تھی دم نکلتا ان کی باہوں میں
وہی حسرت بہ شکل زخم دل ہم کو رلاتی ہیں
کبھی تو راس آئے مجھ کو میرے خواب کی دنیا
مگر خوابوں کا کیا خوابوں کی باتیں یاد آتی ہیں

Read 2864 times

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.

Latest Article

Contact Us

RAJ MAHAL, H. No. 11
CROSS ROAD No. 6/B
AZAD NAGAR, MANGO
JAMSHEDPUR- 832110
JHARKHAND, EAST SINGHBHUM, INDIA
E-mail : mahtabalampervez@gmail.com

Aalamiparwaz.com

Aalamiparwaz.com is the first urdu web magazine launched from Jamshedpur, Jharkhand. Users can submit their articles, mazameen, afsane by sending the Inpage file to this email id mahtabalampervez@gmail.com, aslamjamshedpuri@gmail.com