الأربعاء, 01 أيار 2019 08:01

غزل- مشتاق احزن : گھر جلتا ہے GHAZAL – GHAR JALTA HAI…..MUSHTAQUE AHZAN

Rate this item
(0 votes)

غزل

مشتاق احزن : جمشید پور

انڈیا

 

 جب کبھی میری امیدوں کا شجر جلتا ہے

 میرے اندر کہیں احساس کا پر جلتا ہے

 وہ تو رہتا ہے مرے پیکر اشعار میں گم

 ہاں اسی واسطے سوچوں کا سفر جلتا ہے

 وہ اندھیروں کو نگل جاتا ہے بن کر سورج

 جہد کی آنچ پہ جو شام و سحر جلتا ہے

 سرد لہروں سے بھڑک اٹھتے ہیں دل میں شعلے

 کیا قیامت ہے کہ برسات میں گھر جلتا ہے

 روزو شب ظلم کے سائے میں جہاں کٹتے ہیں

 ایسی جگہوں پہ تو آہوں کا ثمر جلتا ہے

 اپنی نفرت میں وہ رہتے ہیں شرابور احزن

 اور میں ہو کہ محبت میں جگر جلتا ہے

 

 مشتاق احزن جمشید پور

 انڈیا

 موبائل نمبر 9334195021

Read 1824 times

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.

Latest Article

Contact Us

RAJ MAHAL, H. No. 11
CROSS ROAD No. 6/B
AZAD NAGAR, MANGO
JAMSHEDPUR- 832110
JHARKHAND, EAST SINGHBHUM, INDIA
E-mail : mahtabalampervez@gmail.com

Aalamiparwaz.com

Aalamiparwaz.com is the first urdu web magazine launched from Jamshedpur, Jharkhand. Users can submit their articles, mazameen, afsane by sending the Inpage file to this email id mahtabalampervez@gmail.com, aslamjamshedpuri@gmail.com